حفیظ شیخ نے اپنی ناکامیوں کا ملبہ اپوزیشن پر ڈال دیا!

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام) وفاقی وزیر خزانہ حفیظ شیخ نے کہا کہ ماضی کی حکومت نے ڈالر کے قدر میں اضافے کو مصنوعی طریقے سے روکا جس باعث پاکستان کی انڈسٹری تباہ ہو ئی،جب عمران خان کی حکومت آئی تو ملک شدید اقتصادی بحران میں مبتلا تھا اور اس کی وجہ سے ملک کو آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا،

وزیراعظم نے آئی ایم ایف سے بہتر پروگرام ڈیل کیا اور سخت فیصلے کئے جن میں حکومتی اخراجات کم ہو گئے،آئی این پی کے مطابق ہفتہ کو لاہور میں گورنر پنجاب اور دیگر ارکان اسمبلی سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حفیظ شیخ نے کہا کہ کوئی بھی آئی ایم ایف کے پاس اپنی مرضی سے نہیں جاتا ہے، جب حالات بہت بگڑ جاتے ہیں تو تب آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑتا ہے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ اخراجات میں کمی وزیراعظم ہاؤس سے شروع کی گئی اور پھر صدر ہاؤس، کابینہ اور سیکورٹی اداروں سب نے اپنے اخراجات کم کئے یہاں تا کہ پوری سول اور ملٹری اداروں میں منظم طریقے سے اخراجات کو کم کیا گیا، دوسرا کام یہ کیا گیا کہ پاکستان کے صاحب حیثیت افراد پر ٹیکس بڑھانے کے اقدامات کئے گئے، کیونکہ اگر ہم نے لوگوں کو صاف پانی،

روزگار، بنیادی اشیاء ضروریہ عوام کو دینی ہیں تو ہم مستقل باہر سے قرضے لے کر نہیں چل سکتے ہیں اس لئے ٹیکسز پر 17فیصد گروتھ کی گئی، انہوں نے کہا ماضی کی حکومت نے ڈالر کے قدر میں اضافے کو مصنوعی طریقے سے روکا جس باعث پاکستان کی انڈسٹری تباہ ہو ئی اور امپورٹ میں اضافہ اور ایکسپورٹس 0.5فیصد سے بھی کم ہو گئی تھیں اور فارن ریزرور بھی کم ترین سطح پر آ گئے تھے ان حالات میں کیسے کوئی ملک ترقی کر سکتا ہے،

وزیراعظم عمران خان نے مشکل فیصلے کرتے ہوئے پاکستان کی معیشت کو پائیدار بنیادوں پر مستحکم کیا ہے اور اس لئے انڈسٹری کو خصوصی مراعات فراہم کی گئی، وزیر خزانہ نے کہا کورونا میں ہمارے خطے میں بنگلہ دیش، ہندوستان، سب کی ایکسپورٹس میں کمی آرہی ہے جبکہ پاکستان کی ایکسپورٹس میں اضافہ ہو رہا ہے۔ ڈاکٹر حفیظ شیخ نے کہا کہ آج ملک میں ڈالر مستحکم ہے، ڈالر کو زبردستی کم نہیں رکھا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت میں ملک میں الیکشن کا ماحول ہے، ہماری خواہش ہے کہ سینیٹ انتخابات کے حوالے سے گالی گلوچ نہ کیا جائے اور مہذب طریقے سے سینیٹ الیکشن ہوں، ووٹوں کی خریدوفروخت نہ ہو اور دنیا دیکھے کہ پاکستان کے سیاسی نظام بہتر ہو چکا ہے ، انہو ں نے کہا کہ ہماری طرف سے کوشش ہو گی کہ ہم اپنا ایسا کردار لے کر چلیں جس سے ہمارے سپورٹرز مطمئن اور خوش ہوں۔

ڈاکٹر حفیظ شیخ نے سوال کے جواب میں کہا کہ یوسف رضا گیلانی سابق وزیراعظم ہیں اور میں نے ان کے ساتھ کام بھی کیا ہے، لیکن میرا اور یوسف رضا گیلانی کا مقابلہ نہیں ہے، یہ مقابلہ دو سیاسی پارٹیوں کا ہے، جسے قومی اسمبلی کے زیادہ ممبران ووٹ دیں گے وہ جیت جائے گا۔ میڈیا سے گفتگو میں وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ پنجاب میں ضمنی انتخاب پر مسلم لیگ نون کا بیانیہ سمجھ سے بالاتر ہے جہاں ان کی جیت ہوئی وہاں سب سہی لیکن جہاں ہار ہو وہاں ان کو مسائل نظر آتے ہیں۔

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں