لڑکا لڑکی تشددکیس،ملزم فرحان کی ضمانت بعد ازگرفتاری پرنوٹس جاری

اسلام آ باد (مانیٹرنگ نیوز‘ ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) اسلام آباد ہائیکورٹ نے ای الیون میں لڑکے لڑکی کو جنسی ہراساں اور تشدد کرنے کے کیس میں شریک ملزم فرحان شاہین کی ضمانت بعد از گرفتاری پر نوٹسز جاری کر دیے۔ جسٹس طارق محمود جہانگیری نے ملزم فرحان شاہین کی درخواست پر سماعت کی۔ عدالت نے مدعی مقدمہ اور ایس ایچ او تھانہ گولڑہ سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔ ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے یکم ستمبر کو ملزم کی درخواست ضمانت خارج کر دی تھی۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا تھا کہ ایڈیشنل سیشن جج کے فیصلے میں قانونی سقم ہے، عدالت درخواست ضمانت بعد از گرفتاری کی درخواست منظور کرے۔ اسی کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے مرکزی ملزم عثمان مرزا کے ساتھ شریک ملزم عمر بلال مروت کی ضمانت منظور کی تھی۔ واضح رہے کہ واقعہ 18 نومبر 2020 کو پیش آیا تھا جس کی ایف آئی آر 8 ماہ تاخیر سے درج ہوئی، مقدمہ متاثرین نہیں بلکہ ایس ایچ او تھانہ گولڑہ کی شکایت پر 6 جولائی 2021 کو درج ہوا تھا۔ کیس میں گرفتار کیے گئے ملزمان میں مرکزی ملزم عثمان مرزا کے علاوہ عطا الرحمان، فرحان شاہین اور مدارس بٹ شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں