اسلام آبادکی ایک اور ننھی پری درندہ صفت کے ہاتھوں زیادتی کا شکار!

اسلام آباد(مانیٹرنگ نیوز‘ صحافی ڈاٹ کام‘ ویب ڈیسک)وفاقی دارلحکومت میں ایک اور ننھی پری درندہ صفت کے ہاتھوں زیادتی کا شکار ہو گئی۔تھانہ بہارہ کے علاقہ محلہ حافظ آباد کرنل امان اللہ روڈ کے رہائشی وفاقی ادارہ شماریات کے ملازم ظفر عباس نامی شہری کی چارسالہ بیٹی بارش دیکھنے گھر کے مین گیٹ پر گئی جہاں سے اسے کسی اوباش شخص نے دبوچ لیا.بعدازاں بچی گھر سے چند فرلانگ کے فاصلے پر جھاڑیوں سے بے ہوشی کی حالت میں پڑی ہوئی ملی۔جسے طبی امداد فراہم کرنے کیلئے پولی کلینک ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم بچی کی حالت غیر ہونے کی وجہ سے اسے پمز ہسپتال منتقل کر دیا گیا جہاں وہ انتہائی نگہداشت وارڈ میں زیر علاج ہے۔آن لائن کے مطابق بہارہ کہو پولیس نے وقوعہ کا مقدمہ درج کر لیا ہے ایف آئی آر میں بچی سے زیادتی اور اقدام قتل کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔ایف آئی آر کے مطابق معصوم بچی کو کسی درندہ صفت شخص نے اپنی ہوس کانشانہ بنایا اور اسے جھاڑیوں میں پھینک کر فرار ہوگیا تھا۔ آئی جی اسلام آباد عامر ذوالفقار خان نے گزشتہ روز پمز ہسپتال میں بچی کی عیادت کی اور بچی کے والدین سے ملاقات کی اور انہیں یقین دلایا کہ بہت جلد درندہ صفت شخص کو گرفتار کر لیا جائے گا۔آئی جی اسلام آباد نے درندگی کا کھیل کھیلنے والے ملزمان کی گرفتاری کے لئے ایس پی انوسٹی گیشن مصطفی تنویر اور ایس پی سٹی عامر نیازی کی سربراہی میں دو الگ الگ ٹیمیں تشکیل دیدی ہیں جو اس واقعہ پر تحقیقات میں مصروف ہیں جبکہ دونوں ٹیمیں ڈی آٗی جی آپریشن وقار الدین سید سے مسلسل رابطہ میں رہیں گی اور ڈی آئی جی آپریشن دونوں ٹیموں کی نگرانی بھی کریں گے۔پولیس ذرائع کے مطابق پولیس نے 60مشتبہ افراد کو گرفتار کرکے تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کردیا ہے جبکہ بہارہ کہو میں وفاقی پولیس مسلسل سرچ آپریشن کر رہی ہے جبکہ ڈی آئی جی آپریشن نے ایس ایچ او بہارہ کہو اور سپیشل برانچ سے جرائم پیشہ افراد کے نام بھی مانگ لئے ہیں جن کو بھی شامل تفتیش کیا جائے گا۔۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں