مال خرچ کرنے کے فضائل میں

صحابہ ؓ کا ایثار (قسط۔17)
ایک حدیث میں آیا ہے لوگو!اپنے لئے کچھ آگے بھیج دو‘عنقریب وہ زمانہ آنے والا ہے جب کہ حق تعالیٰ شانہ ُ کا ارشاد‘ایسی حالت میں کہ نہ کوئی واسطہ درمیان میں ہو گا‘نہ کوئی پر دہ درمیان میں ہو گا‘یہ ہو گا کیا تیرے پاس رسول نہیں آئے جنہوں نے تجھے احکام پہنچا دئیے ہوں؟ کیا میں نے تجھ کو مال عطا نہیں کیا تھا؟ کیا میں نے تجھے ضرورت سے زیادہ نہیں دیا تھا؟ تو نے اپنے لئے کیا چیز آگے بھیجی؟ وہ شخص ادھر اُدھر دیکھے گا کچھ نظر نہ آئے گا‘ آنکھوں کے سامنے جہنم ہو گی‘پس جو شخص اس سے بچ سکتا ہو بچنے کی کوشش کرے‘چاہے کھجور کے ایک ٹکڑے ہی سے کیوں نہ ہو (کنز)۔ (کتاب۔۔فضائل صدقات)

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں