مال خرچ کرنے کے فضائل میں

زندگی بدل دینے والی معروف مذہبی کتاب فضائل صدقات کا روزانہ قسط وار اپنی ویب سائٹ صحافی ڈاٹ کام پر مطالعہ کریں
حضرت ابوبکر ؓ کا غصہ میں صلہ رحمی کے ترک کا ارادہ کرنا (قسط۔5)
رات کو ان کے پہلو بستروں سے علیحدہ رہتے ہیں اس طرح کہ وہ لوگ اپنے رب کو (عذاب کے) خوف سے اور (ثواب کی) امید میں پکارتے رہتے ہیں اور ہماری دی گئی چیزوں سے خرچ کر تے رہتے ہیں پس کوئی نہیں جانتا کہ ایسے لوگوں کی آنکھوں کی ٹھنڈک کا کیا کیا سامان خزانہ غیب میں موجود ہے‘ یہ بدلہ ہے ان کے نیک اعمال کا۔
(ف): ”رات کو ان کے پہلو بستروں سے علیحدہ رہتے ہیں“ کے متعلق علمائے تفسیر کے دو قول ہیں ایک یہ کہ اس سے مغرب عشاء کا درمیان مراد ہے‘ بہت سے آثار سے اس کی تائید ہو تی ہے‘ حضرت انس ؓفرماتے ہیں کہ یہ آیت شریفہ ہمارے بارے میں نازل ہوئی‘ ہم انصار کی جماعت مغرب کی نماز پڑھ کر اپنے گھر واپس نہ ہو تے تھے اس وقت تک کہ حضور ؐکے ساتھ عشاء کی نماز نہ پڑھ لیں‘ اس پر یہ آیت شریفہ نازل ہوئی‘ ایک اور روایت میں حضرت انس ؓہی سے نقل کیا گیا کہ مہاجرین صحابہ ؓکی ایک جماعت کا معمول یہ تھا کہ وہ مغرب کے بعد سے عشاء تک نوافل پڑھا کر تے‘ اس پر یہ آیت شریفہ نازل ہوئی‘ حضرت بلال ؓفرماتے ہیں کہ ہم لوگ مغرب کے بعد بیٹھے رہتے اور صحابہ ؓ کی ایک جماعت مغرب سے عشاء تک نماز پڑھتی تھی‘اس پر یہ آیت شریفہ نازل ہوئی‘عبداللہ بن عیسیٰ ؓسے بھی یہی نقل کیا گیا کہ انصار کی ایک جماعت مغرب سے عشاء تک نوافل پڑھتی تھی‘اس پر یہ آیت شریفہ نازل ہوئی‘دوسرا قول یہ ہے کہ اس سے تہجد کی نماز مراد ہے۔ (کتاب۔۔فضائل صدقات)

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں