مال خرچ کرنے کے فضائل میں

حضرت ابوبکر ؓ کا غصہ میں صلہ رحمی کے ترک کا ارادہ کرنا (قسط۔4)
ایک دوسری حدیث میں ہے کہ اس آیت شریفہ کے بعد حضرت ابو بکر ؓ نے جتنا پہلے سے خرچ کر تے تھے‘اس کا دو چند کر دیا‘ ایک اور حدیث میں ہے کہ دو یتیم تھے جو حضرت ابو بکر ؓکی پرورش میں تھے جن میں سے ایک مسطح ؓتھے‘حضرت ابوبکر ؓنے دونوں کا نفقہ بند کرنے کی قسم کھا لی تھی‘

حضرت ابن عباس ؓ فرماتے ہیں کہ صحابہ ؓمیں کئی آدمی ایسے تھے جنہوں نے حضرت عائشہ ؓکے اوپر بہتان میں حصہ لیا‘جس کی وجہ سے بہت سے صحابہ کرام ؓجن میں حضرت ابوبکر ؓ بھی ہیں‘ایسے تھے جنہوں نے قسم کھا لی تھی کہ جن لوگوں نے اس بہتان کی اشاعت میں حصہ لیا‘ان پر خرچ نہ کریں گے‘

اس پر یہ آیت شریفہ نازل ہوئی کہ بزرگی والے اور وسعت والے حضرات اس کی قسم نہ کھائیں کہ وہ صلہ رحمی نہ کریں گے اور جس طرح پہلے خرچ کر تے تھے اسی طرح خرچ نہ کریں گے‘(درمنشور) کس قدر مجاہدہ عظیم ہے کہ ایک شخص کسی کی بیٹی کی آبر و ریزی میں جھوٹی باتیں کہتا پھرے اور پھر وہ اسکی اعانت اسی طرح کرے جس طرح پہلے سے کر تا تھا بلکہ اس سے بھی دو چند کر دے۔ (کتاب۔۔فضائل صدقات)

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں