فضائل ذکر۔۔کلمہ کا اخلاص یہ ہے کہ محرمات سے روک دے

حضور اقدس ﷺ کا ارشاد ہے کہ کوئی بندہ ایسا نہیں کہ لا الہ الا اللہ کہے اور اس کے لئے آسمانوں کے دروازے نہ کھل جائیں یہاں تک کہ یہ کلمہ سیدھا عرش تک پہو نچتا ہے بشرطیکہ کبیرہ گناہوں سے بچتا رہے۔(ف) کتنی بڑی فضیلت ہے اور قبولیت کی انتہا ہے کہ یہ کلمہ براہ راست عرش معلی تک پہنچتا ہے اور یہ ابھی معلوم ہو چکا ہے کہ اگر کبیرہ گناہوں کے ساتھ بھی کہا جائے تو نفع سے اس وقت بھی خالی نہیں‘

ملا علی قاری ؒ فرماتے ہیں کہ کبائر سے بچنے کی شرط قبول کی جلدی اور آسمان کے سب دروازے کھلنے کے اعتبار سے ہے ورنہ ثواب اور قبول سے کبائر کے ساتھ بھی خالی نہیں‘بعض علماء نے اس ہدیث کا یہ مطلب بیان فرمایا ہے کہ ایسے شخص کے واسطے مرنے کے بعد اس کی روح کے اعزاز میں آسمان کے سب دروازے کھل جائیں گے‘

ایک حدیث میں آیا ہے دو کلمے ایسے ہیں کہ ان میں سے ایک کیلئے عرش سے نیچے کوئی منتہا نہیں‘دوسرا آسمان اور زمینکو (اپنے نوریا اپنے اجر سے) بھردے‘ایک لا الہ الا اللہ دوسرا اللہ اکبر۔(کتاب۔۔فضائل اعمال)

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں