تلاوت کی برکت اور کلام اللہ کی فضیلت

عقبہ بن عامر ؓ کہتے ہیں کہ نبی کریم ﷺ تشریف لائے‘ ہم لوگ صفہ میں بیٹھے تھے‘ آپ ؐ نے فرمایا کہ تم میں سے کون شخص اس کو پسند کر تا ہے کہ علی الصبح بازار بُطحان یا عقیق میں جاوے اور دو اونٹنیاں عمدہ سے عمدہ بلا کسی قسم کے گناہ اور قطع رحمی کے پکڑ لائے‘ صحابہ ؓ نے عرض کیا کہ اس کو تو ہم میں سے ہر شخص پسند کرے گا‘حضور ﷺ نے فرمایا کہ مسجد میں جا کر دو آیتوں کا پڑھنا یا پڑھا دینا دو اونٹنیوں سے اور تین آیات کا تین اونٹنیوں سے اسی طرح چار کا چار سے افضل ہے اور ان کے برابر اونٹوں سے افضل ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں