شقی القلب باپ پیسوں کی خاطر اپنی سگی بیٹی سے کیاکرواتا رہا؟ ننھی بچی کی کہانی‘پورے ملک میں آگیا بونچال‘جان کر آپ کے دل بھی کانپ اٹھیں گے

نئی دہلی(مانیٹرنگ نیوز‘ ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام)بارہ سالہ بچی نے کانسلرز کو بتایا کہ دو سال تک ہر ہفتے مرد اس کے گھر آتے اور اس کا ریپ کرتے۔ چند افراد سے اس کے والد کی جان پہچان تھی اور کچھ بالکل انجان تھے۔آئی این پی کے مطابق وہ کہتی ہیں کہ اس سب کی شروعات تب ہوئی جب میرے والد اپنے دوستوں کو گھر پر شراب پینے کے لیے مدعو کرنے لگے۔شراب کے نشے میں دھت مرد ان کے والدین کے سامنے انھیں چھیڑتے اور چھوتے۔ کبھی کبھار مرد ان کی والدہ کے ساتھ ان کے گھر کے واحد پھپھوند کی بو سے بھرے بیڈروم میں غائب ہو جاتے۔پھر ایک دن، بچی نے یاد کرتے ہوئے بتایا کہ ان کے والد نے ان کو اپنے ایک دوست کے ساتھ بستر پر دھکیل دیا اور باہر سے دروازہ بند کر دیا۔ اس مرد نے بچی کا ریپ کر دیا۔جلد ہی بچی کا بچپن بھیانک خواب بن گیا۔ ان کے والد نے مردوں کو کال کر کے ان کی مردوں کے ساتھ بکنگ شروع کر دی اور بدلے میں پیسے وصول کرنے لگے۔کانسلرز کا ماننا ہے کہ تب سے اب تک کم از کم 30 مردوں نے بچی کا ریپ کیا ہے۔بچوں کی بہبود کے لیے کام کرنے والے حکام نے 20 ستمبر کو بچی کے اساتذہ کی طرف سے ملنے والی خفیہ اطلاع پر عمل کرتے ہوتے ہوئے بچی کو سکول سے بازیاب کرایا اور محفوظ مقام پر لے گئے۔حکام کے مطابق طبی جانچ سے ریپ ثابت ہوا۔ان کے والد سمیت چار افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ ایک بچی کو پورنوگرافک مقاصد اور جنسی تشدد کے لیے استعمال کرنے پر تمام افراد پر ریپ کی فردِ جرم عائد کی گئی ہے۔ ان تمام لوگوں کی ضمانت مسترد کر دی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں