بھارت میں کورونا کا قہر جاری، مسلسل 12ویں روز 3 لاکھ سے زائد کیسز‘ساڑھے تین ہزار اموات!

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام) بھارت میں کورونا کا قہر مسلسل جاری ہے پیر کو ایک بار پھر ملک میں ساڑھے تین لاکھ سے زیادہ کیسز درج کیے گئے، جبکہ تقریبا ساڑھے تین ہزار اموات بھی ہوئی۔بھارتی وزارت صحت کی وزارت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں 3 لاکھ 68 ہزار 147 نئے کیسز درج کیے گئے، جس کے بعد متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد بڑھ کر 1کروڑ 99 لاکھ 25 ہزار 604 ہوگئی ہے۔صباح نیوز کے مطابق وہیں 3417 مریضوں کی موت ہوچکی ہے اور مرنے والوں کی کل تعداد 2 لاکھ 18 ہزار 959 ہوگئی ہے۔

اس وقت ملک میں کووڈ کے فعال مریضوں کی مجموعی تعداد 34،13،642 ہے جبکہ صحت یاب ہونے والے مریضوں کی مجموعی تعداد 1،62،93،003 ہوگئی ہے۔قا بل ذکر بات یہ ہے کہ یہ مسلسل 12 واں دن ہے جب کورونا انفیکشن کے 3 لاکھ سے زیادہ کیسز درج کیے گئے ہیں، بھارتی دارالحکومت دہلی کے متعدد ہسپتالوں میں آکسیجن اسٹاک میں تیزی سے کمی آنے کی اطلاع ملی۔ اور اس موقع پر مدد کے پیغامات بھیجے گئے۔ بترا اسپتال میں 12 کووڈ مریضوں کی آکسیجن کی عدم دستیابی کی وجہ سے موت ہوگئی۔دہلی حکومت کے زیر انتظام جی ٹی بی اسپتال نے بتایا کہ اس کا اسٹاک آٹھ بجے تک ہے جبکہ راجیو گاندھی سپر اسپیشلیٹی اسپتال نے کہا ان کا آکسیجن اسٹاک چار گھنٹے تک برقرار رہے گا۔

راجیو گاندھی سپر اسپیشیلٹی اسپتال کے ذرائع نے بتایا کہ آکسیجن کی فراہمی ختم ہونے کی وجہ سے انھوں نے داخلہ روک دیا ہے۔اسپتال میں تقریبا 350 مریض ہیں اور سبھی آکسیجن کی مدد پر ہیں۔عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے راگھو چڈھا نے کہا کہ راجیو گاندھی سپر اسپیشلائٹی اسپتال کے لئے دو میٹرک ٹن لکویڈ میڈیکل آکسیجن (ایل ایم او) لے جانے والا ایک کریوجنک ٹینکر چند منٹ میں اس سہولت کیلیے پہنچ جائے گا۔انہوں نے ٹویٹر پر کہا، “یہ کہنے سے نفرت ہے۔ لیکن آکسیجن فراہم کنندگان نے انکار کردیا ہے، اور ہمارے پاس موجود ہر عضلہ کو استعمال کر رہے ہیں۔” گذشتہ روز، سٹی ہاسپٹل نے ایس او ایس کے بٹن کو بھی دبایا کیونکہ اس نے بتایا کہ اس میں آکسیجن دو گھنٹے باقی ہے۔

ہسپتال میں روزانہ کم از کم 11، ہزارکیوبک میٹر آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے اور روزانہ کی بنیاد پر اس کی کھپت 10 ہزارکیوبک میٹر ہے۔ویمہنس ہسپتال نے بھی سوشل میڈیا پر حکومت سے آکسیجن کی فراہمی کی درخواست کی کیونکہ جان بچانے والی گیس صرف چار گھنٹے کی ہے۔بعد میں، اسپتال کو آکسیجن ٹینکر ملنے کے بعد یہ مسئلہ حل ہوگیا۔ دہلی کورونا موبائل ایپلی کیشن کے مطابق، اسپتال میں آئی سی یو میں 94 مریض ہیں۔

آکاش ہیلتھ کیئر اسپتال نے بھی اس کے گرتے ہوئے آکسیجن کے بارے میں ٹویٹر پر ایس او ایس پیغام بھیجا۔ اسپتال میں 250 کوویڈ مریض ہیں۔آکسیجن کی سپلائی کم ہونے کے باعث جنوبی دہلی کا آئرین اسپتال بھی بحران کا شکار تھا۔قومی دارالحکومت اور اس کے نواحی علاقوں کے اسپتال سوشل میڈیا اور دوسرے پلیٹ فارمز پر مدد کیلیے مایوس پیغامات بھیج رہے ہیں۔

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں