گھوٹکی ضمنی الیکشن‘تبدیلی سرکار کے روایتی ہتھکنڈے!

گھوٹکی(مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) پی ٹی آئی رہنماوں کی پولنگ اسٹینشنز میں گھسنے کی کوشش پر پیپلزپارٹی کا چیف الیکشن کمشنر کو خط،لیکشن کمیشن نے اراکین سندھ اسمبلی دعا بھٹو، حلیم عادل شیخ اور علی نواز خان مہر کو گھوٹکی سے بیدخل کرنے کا حکم دے دیا۔ منگل کو گھوٹکی کے حلقے این اے 205 میں پی ٹی آئی رہنماوں نے پولنگ اسٹینشنز میں گھسنے کی کوشش کی۔پاکستان پیپلزپارٹی نے چیف الیکشن کمشنر کو خط لکھ دیا، خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ حلیم عادل شیخ اور علی نواز مہر پولنگ اسٹیشنوں میں گھسنے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ رکن قومی اسمبلی حلیم عادل شیخ ووٹرز کو دھمکیاں بھی دے رہے ہیں۔پاکستان پیپلزپارٹی نے چیف الیکشن کمشنر کو جاری کردہ خط میں الیکشن کمیشن سے فوری ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ لیکشن کمیشن نے اراکین سندھ اسمبلی دعا بھٹو، حلیم عادل شیخ اور علی نواز خان مہر کو گھوٹکی سے بیدخل کرنے کا حکم دے دیا۔دوسری جانب پی پی پی سندھ کے صدر نثار کھوڑو کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے حلیم عادل شیخ سمیت دیگر ایم پی ایز تاحال پولنگ اسٹیشنز کے اندر ہیں، الیکشن کمیشن نوٹس لے۔ نثار کھوڑو نے کہا کہ ڈی آرو حلیم عادل شیخ سمیت دیگر ایم پی ایز کو پولنگ کا عمل مکمل ہونے تک حلقے سے باہر نکالنے والے فیصلے پر فوری عمل کرائے۔ الیکشن کمیشن اگر ایکشن نہیں لے گی تو الیکشن کمیشن پر سوالیہ نشان آئے گا۔انہوں نے کہا کہ حلیم عادل شیخ پولیس پروٹوکول میں گھوم رہا ہے۔ ووٹرز کو ان کی مرضی سے ووٹ کاسٹ کرنے دیا جائے، ووٹرز کو پولنگ اسٹیشن کے اندر جانے سے روکا جارہا ہے۔صدر پیپلزپارٹی سندھ نثار کھوڑو نے مزید کہا کہ شب خون مارنے والے دبئی میں جاکر بیمار ہو جاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں