کورونا‘ لاک ڈاؤن کے بعد طیارہ حادثہ نے عید کی خوشیاں ختم کر دیں!

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام) نائب امیر جماعت اسلامی لیاقت بلوچ نے کراچی ائیرپورٹ کے قریب لاہور سے گئی پرواز کے حادثہ پر دلی دکھ اور صدمہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا، لاک ڈاؤن کے بعد عید کی خوشیوں میں شرکت کے لیے جانے والے مسافروں کا حادثہ میں لقمہ اجل بننا بڑا صدمہ ہے۔حادثہ کی بڑی انکوائری نا گزیر ہے۔لیاقت بلوچ نے گوجرانوالہ میں معروف سرجن ڈاکٹر یوسف طارق کے انتقال پر تعزیت کی اور منڈی بہاؤ الدین، پھالیہ، پاہڑیاانوالی، سیدا شریف میں الخدمت کے تندور، سستا کھانا، عید گفٹ، راشن کے مراکز کا وزٹ کیا اور معززین و کارکنان کے اعزاز میں افطار ڈنر سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جماعت اسلامی اور الخدمت فاؤنڈیشن نے ملک کے طول و عرض میں کورونا وبا اور لاک ڈاؤن متاثرہ خاندانوں کی بے لوث اور بلا امتیاز خدمت کی ہے۔ جماعت اسلامی کی ملک گیر منظم تنظیم اور کارکنان ملک ریلیف کا بڑا اثاثہ ہیں۔ ملک کے نظام کی تبدیلی اور عوامی فلاحی اسلامی نظام کے لیے کارکنان کو اگلے مرحلے میں بڑی محنت کرنا ہے۔ ملک کا روایتی گلاسٹراز نظام ناقابل برداشت ہے۔ عمران خان نے اسٹیٹس کو برقرار رکھتے ہوئے عوام کو مایوس کیا ہے۔ روایتی چند سیاسی نائک فرسودہ نظام نہیں بدل سکتے۔ لیاقت بلوچ نے جامعہ رحیمیہ میں جمعۃ الوداع کے خطبہ میں کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ اور فلسطین عالم اسلام کی شہ رگ ہے۔ یہود و ہنود کے قبضہ سے قبلہ اول کی بازیابی اور کشمیریوں کے لیے حق خود ارادیت کا حصول پوری امت کی گردن پر قرض اور فرض ہے۔ یوم القدس پوری امت کو بیت المقدس کی آزادی کے لیے متحد ہونے کا پیغام ہے۔ حرمین شریفین کی حفاظت اور سرزمین انبیاء فلسطین کے تحفظ پر اہل ایمان متحد ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں