مہنگی کرنیکی درخواست مسترد،نیپرانے بجلی فی یونٹ 21پیسے سستی کر دی

اسلام آباد(مانیٹرنگ نیوز‘ ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام)نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے جون کی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں اگلے ایک مہینے کیلئے بجلی کی قیمت 21 پیسے فی یونٹ سستی کردی ہے۔نیپرا کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے جون کی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی 80 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست کی تھی جس میں یہ موقف اختیار کیا گیا تھا کہ جون میں بجلی کی پیداواری لاگت 6.73 روپے فی یونٹ رہی جبکہ بجلی کا پیشگی پیداواری ٹیرف 5 روپے 93 پیسے فی یونٹ تھا۔ نیپرا اتھارٹی نے اعدادوشمار کا جائزہ لینے کے بعد بجلی مہنگی کرنے کی درخواست مسترد کردی۔ بجلی 21 پیسے فی یونٹ سستی ہونے کا اطلاق کے الیکٹرک صارفین پر نہیں ہوگا۔ فیصلے کا اطلاق لائف لائن زرعی صارفین اور کے الیکڑک صارفین پر نہیں ہوگا۔سی پی پی اے حکام نے کاہ این ٹٰی ڈی سی کا بجلی کمپنیوں کے ساتھ بجلی ترسیل کا معاہدہ ہے۔ممبر سندھ نیپرا رفیق شیخ نے کہا کیا سی پی پی اے کا این ٹی ڈی سی کے ساتھ بجل ترسیل کا کوئی معاہدہ ہے، اگراین پی سی سی کسی چیز کی ذمہ داری نہیں لیتا تو ٹیرف پٹیشن کیوں لے کرآئے ہیں، سب کو پتا چلنا چاہیے کہ مسئلہ کہاں پر آرہاہے، ڈھائی سال سے چل رہاکہ ادارے ایک دوسرے پر ذمہ داری ڈال رہے ہیں، اب بات سیٹل ہونی چاہیے کہ کس کی کیاذمہ داری ہے ۔ معاملے پرسی پی پی اے این ٹی ڈی سی اور ڈسکوز نمائندگان کا اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ این پی سی سی حکام نے کہامیرٹ آرڈر سے ہٹ کر پلانٹس چلانے سے ڈیڑھ ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا، ہمیں دو سو ایم ایم سی ایف ڈی ایل این جی کم فراہم کی گئی ہے۔چئرمین نیپرا نے کہا ایل این جی اورکوئلے کی قلت سے اکاسی کروڑ اناسی لاکھ روپے کا بوجھ پڑے گا،حلیہ بجلی بحران پر حکومت انکوائری کررہی ہے، فیول کی عدم دستیابی کا معاملہ اوگرا سے متعلق ہے ہمارے ڈومین سے باہر ہے۔ نیپرا حکام نے کہا سی پی پی اے نے گزشتہ تین سال کی تیرہ ارب روپے کی ایڈجسٹمنٹس مانگی ہیں۔سی پی پی اے حکام نے کہا ان ایڈجسٹمنٹس سے گیارہ ارب روپے کا صارفین کو فائدہ پہنچے گا جو ایڈجسٹمنٹس نیپرانے منظور نہیں کی تھیں ان کو ری کنسائل کرکے لائے ہیں، ہم اس کا ایک الگ سے کیس بنا کر اتھارٹٰی کے سامنے پیش کریں۔ ممبر نیپرا رفیق شیخ نے کہا ان ایڈجسٹمں ٹ کے حوالے سے قانونی پہلووں کو بھی لے کرآئیں۔چئرمین نیپرا نے کہا ہے کہ نیپرا ان ایڈجسٹمنٹ کے حوالے سے بعد میں فیصلہ کرے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں