شاہ محمود قریشی کی بھارت کو ایک اور پیشکش!

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) وزیر خارجہ شا ہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ اس وقت مقبوضہ کشمیر میں 9لاکھ سے زائدبھارتی فوج موجود ہے،5 اگست سے مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو نافذہے، خوراک اور ادویات تک میسر نہیں، سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ اور سیکیورٹی کونسل نے اس بات کا نوٹس لیا ہے،ہم ہمیشہ سے مذاکرات کیلئے تیار تھے اور ہیں۔ بدھ کے روز وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ڈنمارک کے وزیر خارجہ جیبکو فوڈ سے ٹیلیفونک رابطہ کیا، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ڈنمارک کے وزیر خارجہ سے مقبوضہ کشمیر کی مخدوش صورتحال پر تبادلہ خیال کیا وزیر خارجہ نے ڈینش ہم منصب کو مقبوضہ کشمیر میں یکطرفہ بھارتی اقدامات سے آگاہ کیا، وزیر خارجہ شا ہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ اس وقت مقبوضہ کشمیر میں 9لاکھ سے زائدبھارتی فوج موجود ہے،بھارت نے5 اگست سے مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو نافذ کر رکھا ہے، مقبوضہ وادی میں کرفیو کے باعث خوراک اور ادویات تک میسر نہیں، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں میں اضافہ ہوتا جا رہاہے، بھارت کے یکطرفہ اقدامات عالمی قوانین اور اقوام متحدہ کے قرار دادوں کے یکساں منافی ہیں،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مزید کہا ہے کہ سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ اور سیکیورٹی کونسل نے اس بات کا نوٹس لیا ہے،ہم ہمیشہ سے مذاکرات کیلئے تیار تھے اور تیار ہیں اس حوالے سے ڈنمارک کے وزیر خارجہ جیبکو فوڈ نے کہاہے کہ ہم اس بات پر متفق ہیں کہ دو ایٹمی قوتوں میں کشیدگی خطرناک ثابت ہو سکتی ہے، ڈنمارک ان تمام صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے،انہوں نے مزید کہا ہے کہ فریقین خطے کو کشیدگی سے بچانے کیلئے مذاکرات کاراستہ اپنائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں