شاہ محمود قریشی نے حکومتی اقدامات سے معیشت میں بہتری کی نوید سنا دی

ملتان(مانیٹرنگ ڈیسک ‘ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ حکومتی اقدامات سے معیشت میں ٹھہراؤآناشروع ہوگیا ہے ،ملک میں بیرونی سرمایہ کاری آرہی ہے، احتجاج کرنااپوزیشن کاسیاسی حق ہے، حکومت کوغیرمستحکم کرنے سے کوئی مسئلہ حل نہیں ہوتا، ملک پر قرضوں کا بوجھ بہت زیادہ ہے، گزشتہ 10 سالوں میں لئے گئے ریکارڈ قرضوں کا ذمہ دار کون ہے ؟ ،نیب ایک خودمختارادارہ ہے،حکومت کے تابع نہیں۔ اتوار کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ گزشتہ 10 سال میں لئے گئے ریکارڈقرضوں کاذمہ دارکون ہے، تحریک انصاف معاشی مسائل حل کرنے کیلئے کوشاں ہے، نیب ایک خودمختارادارہ ہے،حکومت کے تابع نہیں، نیب نے اپنے فیصلے خودکرنے ہیں،توقع ہے نیب کرپشن کے خاتمے کیلئے ہمارے ساتھ تعاون کرے گا،،قومی خزانے کونقصان پہنچانے والوں کااحتساب ضرورہوناچاہیے۔چیلنجزورثے میں ملے،جلدقابوپالیں گے، انہوں نے کہا کہ بھارت میں انتخابات ہو رہے ہیں، 19مئی تک ہمیں محتاط رہنے کی ضرورت ہے،بھارت غیر ذمہ دارانہ بیان دیتاہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان نے کبھی افغانستان کے معاملات میں مداخلت نہیں کی، افغانستان میں امن واستحکام اورخوشحالی دیکھناچاہتے ہیں، انہوں نے کہا کہکہ بیورو کریسی کا کام حکومت کی پالیسی پر عمل کرنا ہے اور بیورو کریسی کا فرض ہے حکومت کی پالیسی کو عملی جامہ پہنائے۔ بیورو کریسی میں بہت اچھے افسران موجود ہیں۔انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے قرضوں میں بے پناہ اضافہ کیا۔ مہنگائی کی وجہ 8 ماہ کی تحریک انصاف کی حکومت کو قرار نہیں دیا جا سکتا ، ملک پر قرضوں کا بوجھ بہت زیادہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ راتوں رات ملکی مسائل حل نہیں ہو سکتے اس میں بتدریج بہتری آئے گی،حکومتی اقدامات سے معیشت میں ٹھہراؤآناشروع ہوگیا ہے،ملک میں بیرونی سرمایہ کاری آرہی ہے، احتجاج کرنااپوزیشن کاسیاسی حق ہے، حکومت کوغیرمستحکم کرنے سے کوئی مسئلہ حل نہیں ہوتا، انہوں نے کہا کہ وزیراعظم ایران اورچین کادورہ کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں