شاہد خاقان عباسی کی حکومت پر ایسی چڑھائی کہ پی ٹی آئی والے حیران و پریشان ہو جائینگے!

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام) مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے کہ کسی بھی انتخابی اصلاحات کی ضرورت نہیں۔اسلام آباد میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ الیکٹرونک ووٹنگ مشین بنانا حکومت اور پارلیمان کا کام نہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک کو آئین کے مطابق چلائیں، اصلاحات کی ضرورت نہیں،، الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں سے مزید ابہام پیدا ہوگا، الیکٹرونک نظام بنانا الیکشن کمیشن کا اختیار ہے، حکومت کے سرکس کھلاڑیوں کا نہیں۔صباح نیوز کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین مسائل کا حل نہیں، اس مشین سے مزید مسائل پیدا ہوں گے،

شہباز شریف نے نہ پی ڈی ایم بنائی، نہ انہوں نے اسے توڑا ہے، پی ڈی ایم بیانیہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں پولیس فریق بن چکی ہے، اس لیے کہا تھا کہ فوج انتخابی عمل کی نگرانی کرے۔ انہوں نے کہا کہ آج ملک میں بجلی 200 فیصد مہنگی ہو چکی ہے، ملک میں احتساب تو عوام کا ہو رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ73 سالہ تاریخ میں 3 سال میں آٹے کی قیمت دگنی کبھی نہیں ہوئی، وزیراعظم کمیشن ہی بنا دیں آٹے کی قیمت کیسے دگنی ہوگئی، آپ نے چینی کی قیمت کم کرنے کیلئے کیا کارروائی کی؟ ترین صاحب پر جو کیس بنائے گئے اس میں چینی کا کوئی تعلق نہیں۔

انہوں نے کہا کہ یک طرفہ احتساب جاری ہے، کیمرے لگا کر عوام کو دکھائیں، نیب کی وجہ سے نظام ختم ہو چکا ہے، حقائق پتہ نہیں کیوں عوام سے چھپانے کی کوشش کر رہے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ خدا کے لیے ویکسین خرید لیں، ملک میں کورونا وائرس پھیل رہا ہے، اس کی وجہ سے اموات میں اضافہ ہوا ہے، اب لاک ڈاؤن کا خدشہ ہے۔انہوں نے کہا کہ دنیا کا واحد ملک ہے جس کی 23 کروڑ کی آبادی ہے اور ایک ویکسین بھی خرید نہیں سکا،

جبکہ این سی او سی کی میٹنگ میں ہر کسی نے دو دو ماسک پہنے ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے بازاروں کا دورہ کیا، اشیا پڑی تھیں، خریدار کوئی نہیں تھا، ایک سرکاری افسر کیساتھ حکومتی عہدیداروں کا سلوک سب نے دیکھا، سرکاری افسر سے معافی مانگیں، یہ آپ کے نہیں سرکار کے ملازم ہیں۔

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں