سزائے موت کا ملزم 18سال بعد بے گناہ!

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام)سپریم کورٹ نے سزائے موت کے ملزم کو 18سال بعد بری کردیا۔

آئی این پی کے مطابق جمعرات کو سپریم کورٹ میں جسٹس منظور ملک کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے ملزم سجاد حسین کی درخواست پر سماعت کی جس میں ملزم کے وکیل نے عدالت کوبتایا کہ ملزم سجاد حسین پر کلاشنکوف سے فائر کرکے ایک شخص کو قتل کرنے کا الزام تھا لیکن ملزم سے کلاشنکوف بھی برآمد نہیں ہوئی۔

ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ٹرائل کورٹ اور ہائیکورٹ نے ملزم سجاد حسین کو سزائے موت سنائی تھی۔دورانِ سماعت جسٹس منظور ملک نے پوچھا کہ یہ واقعہ کتنے گھنٹے کے بعد رپورٹ ہوا؟ اس پر وکیل نے بتایا کہ واقعہ 56 گھنٹے کے بعد رپورٹ ہوا۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ حیرت کی بات ہے مدعی تھانے گیا پھربھی بروقت رپورٹ درج نہیں ہوئی، اس بندے کا کیا قصور ہے کہ اس نے اتنی بڑی سزا کاٹ لی؟ بعد ازاں عدالت نے ملزم کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے مقدمے سے بری کردیا۔

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں