رانا ثناء اللہ بہت بڑی مصیبت میں پھنس گئے!

فیصل آباد (مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) پاکستان مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر وسابق صوبائی وزیرقانون رانا ثناء اللہ کا فرانس کی حکومت کے تعاون سے چلنے والے واٹر پروجیکٹس کے فنڈز سے ماہانہ نذرانہ لینے کا انکشاف، محکمہ اینٹی کرپشن کی رپورٹ کے مطابق سابق وزیر قانون نے اپنے عہدے کا غیر قانونی استعمال کرتے ہوئے فائدے اٹھائے جبکہ محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب کی جانب سے اس پر مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔ آئی این پی کے مطابق سابق صوبائی وزیرقانون رانا ثناء اللہ کا فرانس کی حکومت کے تعاون سے چلنے والے واٹر پروجیکٹس کے فنڈز سے ماہانہ نذرانہ لینے کا انکشاف محکمہ اینٹی کرپشن کی رپورٹ میں ہوا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رانا ثناء اللہ ایم ڈی واسا سے مل کر غیر قانونی کام کرتے رہے ہیں جبکہ ایم ڈی واسا نے قابل افسران منصوبے سے فارغ کئے۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایم ڈی واسا نے اپنے بیٹے کو غیر قانونی طریقے سے تعیناتی بھی کی، اینٹی کرپشن پنجاب نے معاملے کی تفتیش میں رانا ثناء اللہ کے دو قریبی ساتھیوں کو شامل تفتیش کیا جبکہ معاملے کی مزید تحقیقات کیلئے کمیٹی بنا دی گئی ہے جو مزید چھان بین کر رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں