ایل این جی ریفرنس‘شاہد خاقان عباسی کیخلاف سماعت اچانک ملتوی ہو گئی مگر کیوں؟ جانیے اہم خبر!

اسلام آباد(ویب ڈیسک‘مانیٹرنگ ڈیسک‘صحافی ڈاٹ کام) اسلام آباد کی احتساب عدالت نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی کے خلاف ایل این جی ریفرنس کی سماعت 7 ستمبر تک ملتوی کر دی۔صباح نیوز کے مطابق احتساب عدالت کے جج اعظم خان کے رخصت پر ہونے کے باعث کیس کی سماعت بغیر کارروائی کے ملتوی کر دی گئی۔کیس کی سماعت کے موقع پر شاہد خاقان عباسی عدالت پہنچے۔ قومی احتساب بیورو(نیب)کی جانب سے ضمنی ریفرنس داخل نہ کرایا جا سکا۔نیب پراسیکیوٹر کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ تفتیشی افسر ہائی کورٹ میں ہیں، ضمنی ریفرنس دائر کر دیں گے، سکروٹنی کے لیے ضمنی ریفرنس رجسٹرار کے پاس جمع کرا دیا جائے گا۔نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ ضمنی ریفرنس میں نئے ملزمان کی لسٹ بھی عدالت میں جمع کرا دی جائے گی۔ادھر سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 2 سال سے انکوائری شروع ہے مگر ریفرنس دائر نہیں ہوسکا، اپنی اور خاندان کی ہر ٹرانزکشن نیب کے حوالے کی تھی، میرے اور بیٹے کے اکاؤنٹ کے پیسے پر ٹیکس ادا کرتے ہیں، 2 سال بعد یہ الزام لگایا گیا کہ ایم ڈی پی ایس او کو غلط لگایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکومت 2 سال میں کسی شخص کو تعینات ہی نہیں کر سکی، آج ہر ادارہ زوال پذیر اور تباہ ہو رہا ہے، ہم نیب ختم نہیں کر سکتے تھے، معذرت چاہتے ہیں۔شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ ہم اکیلے نیب ختم نہیں کر سکتے تھے، اس سلسلے میں تمام سیاسی جماعتوں کا فیصلہ ہونا چاہئے۔سابق وزیرِ اعظم نے یہ بھی کہا کہ خلائی مخلوق، محکمہ زراعت جیسے الفاظ اسٹیبلشمنٹ کے لیے استعمال ہوتے رہے ہیں، یہ باتیں پرانی ہو گئیں، اب تو لوگ ڈائریکٹ بات کر رہے ہیں۔

Sahafe.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں