آصف زرداری عدالت میں کس کے حق میں بولتے رہے؟ ضرور جانیے

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک‘ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام) احتساب عدالت میں جعلی اکانٹس کیس کی سماعت کے دوران جج ارشد ملک اور سابق صدر آصف زرداری کے درمیان دلچسپ مکالمے ہوئے جس پر کمرہ عدالت قہقوں سے گونج اٹھاجب کہ آصف زرداری نے انور مجید کے صاحبزادوں سے بہتر رویہ رکھنے کی درخواست کردی۔نیب کی ٹیم سخت سیکیورٹی میں آصف زرداری کو لے کر عدالت پہنچی جہاں سماعت کے موقع پر رحمان ملک، نیئر بخاری، شیری رحمان اور عبدالغنی مجید کے اہلخانہ بھی موجود تھے۔ احتساب عدالت میں کیس کی سماعت کے دوران آصف علی زرداری روسٹرم پر آگئے۔تین ملزمان کو ہتھکڑیوں میں دیکھ کر آصف زرداری نے عدالت کی توجہ ان نوجوانوں کی طرف مبذول کروائی اور کہا کہ یہ پڑھے لکھے لڑکے ہیں انہیں ہتھکڑی کیوں لگا رکھی ہے؟ یہ وائٹ کالر کرائم کے ملزم ہیں۔۔عدالت جو بھی فیصلہ کرے مگر نیب تو سلوک اچھا کرے،جس پر فاضل جج نے استفسار کیا کہ کیا ان ملزمان کو ہتھکڑی نیب نے لگا رکھی ہے؟ نیب حکام نے جواب دیا کہ انہیں جیل سے پولیس لائی ہے ہم نے ہتھکڑی نہیں لگائی، آصف زرداری نے کہا کہ ان ملزمان سے ایسا برتاؤ کیوں کیا جا رہا ہے، ان پرصرف ایک الزام ہے۔۔۔یہ کوئی سماج دشمن عناصر نہیں ہیں، فاضل جج بولے سماج دشمن کے علاوہ ایک اناج دشمن بھی ہوتا ہے، فاضل جج ارشد ملک کے ریمارکس پر کمرہ عدالت میں قہقہے لگ گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں