پندرہ ہزاراور 7500 والے بانڈز کی اچانک منسوخی، صارفین مایوسی کا شکار

سوات (مانیٹرنگ نیوز‘ ویب ڈیسک‘ صحافی ڈاٹ کام)پندرہ ہزاراور 7500 والے بانڈز کی اچانک منسوخی اور ہونے والی قرعہ اندازی نہ ہونے پر کروڑوں روپے انوسٹ کرنے والے صارفین مایوسی کا شکار ہوگئے، حکومتی اقدام پر غم وغصہ کا اظہار کرتے ہوئے عوامی حلقوں نے کہا کہ سٹیٹ بینک نے کروڑوں عوام کو مایوس کردیا،سٹیٹ بینک نے اچانک ساڑھے ساتھ ہزار روپے مالیت کے بانڈز منسوخ کرنے کا اعلان کردیا،

اس کے ساتھ ہی تین دن بعد ہونے والی قرعدہ اندازی بھی منسوخ کردی جوصارفین کے حق پر ڈاکہ ڈالنے کی مترادف ہے، بانڈز رکھنے والے صارفین کا آئی ایم ایف کے ایما پر کئے گئے فیصلے پر شدید غم وغصے کا اظہار، بانڈزرکھنے والوں نے میڈیا کو بتایاکہ تین ماہ تک قومی بچت سکیم میں کروڑوں روپے رکھ کر انہیں حکومت کے فیصلے سے شدید مایوسی ہوئی اگر اس طرح فیصلے ہوتے رہے تو عوام کا قومی اداروں پر اعتماد ختم ہوجائے گا، حکومت پہلے اشتہارات کے ذریعے عوام کو قومی ترقی میں حصہ داری پر راضی کرنے کے لئے اشتہارات چلاتی رہیں اب اچانک بیرونی دباو پر پندرہ ہزار، ا ور ساڑھے سات ہزار روپے والے بانڈز کو ختم کرنے کے فیصلے سے صارفین کوتین ماہ کا انٹرسٹ بھی نہیں دیا

جارہاجو قومی اداروں کی ساکھ پر سوالیہ نشان ہے، واضح رہے کہ حکومت نے آئی ایم ایف کے احکامات پر عمل کرتے ہوئے اچانک پندرہ اور ساڑھے سات ہزار روپے والے بانڈز ختم کرنے کا اعلان کیا، سٹیٹ بینک کے مطابق اس وقت مارکیٹ میں دونوں بانڈز کے تین سو اسی ارب سے زائد عوام کا سرمایہ ان بانڈوں میں لگا ہواہے جس پر سٹیٹ بینک مخصوص انٹرسٹ کے ساتھ صارفین کو رقم انعام کی صورت میں دے رہاتھا، دریں اثناء مختلف بینکوں سے معلوم ہواہے کہ صافین نے بڑی تعداد میں پندرہ ہزار اور ساڑھے سات سو روپے مالیت کے بانڈز بڑی تعداد میں واپس کرنا شروع کردئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں