گلوکار علی ظفر میشا شفیع کیخلاف نئے الزامات لیکر میدان میں آگئے‘جان کر آپ بھی ہکے بکے رہ جائینگے

لاہور (مانیٹرنگ نیوز‘صحافی ڈاٹ کام‘ویب ڈیسک)سیشن عدالت نے گلوکار علی ظفر کے اداکارہ میشا شفیع کیخلاف ہتک عزت دعوی کیس میں مزید ایک گواہ کی شہادت قلمبند کر لی۔ عدالت نے مزید گواہان کو آئندہ تاریخ سماعت پر طلب کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 4 مئی تک ملتوی کر دی۔ گلوکار علی ظفر خود بھی عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔ علی ظفر نے کہا کہ میشا شفیع نے ان پر جھوٹے الزامات لگائے، اب سوشل میڈیا پر جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے پراپیگنڈہ کیا جا رہا ہے، عدالت اس کیس کا جلد از جلد فیصلہ سنائے۔آن لائن کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج شکیل احمد کے روبرو کیس کی سماعت ہوئی۔ گلوکار علی ظفر بھی اپنے وکلا اور اہلیہ کے ہمراہ ایوان عدل میں واقع عدالت میں پیش ہوئے۔ اس موقع پر وہاں موجود لوگوں کی بڑی تعداد علی ظفر کے گرد جمع ہو گئی اور ان کے ساتھ سیلفیاں بنواتی رہی۔ دوران سماعت علی ظفر کے ایک گواہ قمر عباس نے اپنی شہادت قلمبند کروائی۔ عدالت نے مزید گواہان کو طلب کرتے ہوئے کیس کی مزید کارروائی 4 مئی تک ملتوی کر دی۔ عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے علی ظفر کا کہنا تھا کہ مجھے عدالت نے بلایا نہیں تھا لیکن میں خود عدالت میں آیا ہوں حالانکہ جس کو بلایا جا رہا ہے وہ عدالت نہیں آ رہی اور جس کو نہیں بلایا جا رہا وہ خود عدالت آ رہا ہے کیونکہ جو حق سچ پر ہوتا ہے وہ بن بلائے عدالت میں آتا ہے جبکہ جھوٹا عدالتوں کے بلانے پر بھی عدالتوں میں نہیں آتا۔ انہوں نے کہا کہ پہلے مجھ پر جھوٹا الزام لگایا گیا اور اب سوشل میڈیا پر جعلی اکاونٹس بنا کر میرے خلاف پراپیگنڈہ کیا جا رہا ہے۔ ذاتی مفاد کے لئے شریف بندے پر الزام لگا دیا گیا حالانکہ میں نے اتنے سال لگا کر عوام کو تفریح فراہم کی اور عزت کمائی۔ گلوکار علی ظفر نے میشا شفیع کا نام لئے بغیر مزید کہا کہ وہ الزام لگا کر خود امیگریشن کے لئے درخواست دے کر بیرون ملک چلی گئی ہیں،کیا وہ کینیڈا جا کر ملالہ بننا چاہتی ہیں۔ انہیں چاہیے کہ وہ عدالت آ کر کیس کا سامنا کرے کیونکہ میشا شفیع کا اصل اور اپنا کیس اور اس کی اپیل بھی مسترد ہو چکی ہے۔ یہ اب ہتک عزت کا کیس ہے جو میں نے دعوی دائر کر رکھا ہے کیونکہ ان الزامات کی وجہ سے مجھے اور میرے خاندان کو ذہنی، نفسیاتی اور مالی طور پر نقصان پہنچا۔ ”چھنو کی آنکھ“ گانے سے شہرت کی بلندیوں کو چھونے والے گلوکار نے کہا کہ ایک سال سے کیس چل رہا ہے، ہمارے گواہان 8 بار عدالتوں میں آ کر واپس جا چکے ہیں لیکن کیس ختم نہیں ہو رہا اس لئے میری عدالتوں سے استدعا ہے کہ اس کیس کا فیصلہ جلد از جلد سنایا جائے۔ درخواست گزار علی ظفر نے میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر کر رکھا ہے۔ درخواست گزار علی ظفر کے مطابق میشا شفیع نے جھوٹی شہرت کے لئے ہراساں کرنے کے بے بنیاد الزامات عائد کئے۔ میشا شفیع کے ان جھوٹے الزامات سے پوری دنیا میں ان کی شہرت متاثر ہوئی۔ علی ظفر نے استدعا کی کہ عدالت میشا شفیع کو سو کروڑ روپے ہرجانہ ادا کرنے کا حکم دے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں