تیزاب کے نقصانات تو سب نے سنے ہیں مگر چلڈرن ہسپتال کی ڈاکٹر نے تیزاب کے ذریعے تین سالہ بچی کی زندگی بدل کر طب کے شعبے میں اہم کارنامہ سرانجام دے دیا

فیصل آباد ۔ چلڈرن ہسپتال کی گیسٹرو انٹرالوجسٹ ڈاکٹر نگینہ شہزادی نے اینڈو سکوپی کے ذریعے کامیاب پروسجر کرتے ہوئے چنیوٹ کی رہائشی تین سالہ بچی مسکان کی تیزاب سے خوراک والی نالی کھول کر طب کے شعبے میں اہم کارنامہ انجام دیا ہے جس سے بچی اب کھانے پینے کے قابل ہو گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق متاثرہ بچی نے چھ ماہ قبل غلطی سے تیزاب پی لیا تھا اور جلنے کی وجہ سے خوراک والی نالی سکڑ گئی تھی اورمریض بچی کچھ کھا پی نہیں سکتی تھی ۔ چلڈرن ہسپتال میں بچی کا کامیاب علاج کیا گیا ہے ۔ میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر حبیب بٹر کے مطابق بچوں کے امراض کے علاج معالجہ کے لئے طب کے دیگر شعبوں کے ساتھ ساتھ گیسٹرو انٹرالوجی کے شعبے میں اینڈوسکوپی کے ذریعے علاج معالجہ کی سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں اور اس شعبے میں ماہ نومبر 2018 سے اب تک اینڈو سکوپی کرنے کی اوسط تعداد 250 ہے اوریہ شعبہ بے حد فعال بنا دیا گیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں